143

وہ عادات جو آپ کو بدتہذیب ظاہر کریں

کسی انسان کی گفتگو، عادات اور اخلاق اس کی تربیت و فطرت کی نشاندہی کرتی ہیں۔ اگر آپ لوگوں کا رویہ جانچنے میں ماہر ہیں تو آپ باآسانی کسی بھی شخص کی فطرت کا اندازہ لگا سکتے ہیں۔ سماجی ماہرین کا کہنا ہے کہ روزمرہ کی زندگی میں انجام دی جانے والی معمولی عادات اور انداز گفتگو ہمارے اخلاق و تربیت کی تصویر پیش کرتے ہیں۔ کچھ عادات ایسی ہوتی ہیں جو ہمیں بد تہذیب اور بد اخلاق بنا کر پیش کرتی ہیں۔ یقیناً آپ ایسی عادات سے چھٹکارا پانا چاہیں گے۔ تو پھر جانیں وہ کون سی عادات ہیں جو آپ ک منفی تصویر پیش کرتی ہیں۔

شکریہ نہ ادا کرنا
شکریہ ادا کرنا اور شکر گزاری کا اظہار کرنا اچھے اخلاق کی نشانی ہے۔ ضروری نہیں کہ آپ کسی کی جانب سے کوئی بڑی مدد کرنے پر ہی اس کا شکریہ ادا کریں، چھوٹے چھوٹے کاموں پر بھی لوگوں کا شکریہ ادا کرنا آپ کا بہترین تاثر قائم کرے گا۔ شکریہ ادا کرنا اس بات کی نشانی ہے کہ آپ دوسرے شخص کی اپنے لیے کی گئی مدد کو سراہتے ہیں۔

بات کاٹنا
ایسے افراد کو بہت ناپسندیدہ سمجھا جاتا ہے جو اکثر و بیشتر دوسرے افراد کی بات کاٹ کر اپنی بات شروع کردیں۔ اگر آپ کسی شخص کی بات کو آگے بڑھاتے ہوئے اپنی بات کہنا چاہ رہے ہیں تو معذرت کرتے ہوئے اس کی بات کاٹیں۔ لیکن یہ عمل بھی ہمیشہ قابل تعریف نہیں ہوتا۔

ذاتی سوالات پوچھنا
کسی سے اس کے بارے میں ذاتی زندگی کے سوالات پوچھنا نہایت ہی برا خیال کیا جاتا ہے۔ اول تو آپ کو کسی کی ذاتی زندگی سے کوئی سروکار نہیں ہونا چاہیئے، اور اگر آپ نے کسی سے کوئی ذاتی سوال پوچھ ہی لیا ہے تو آپ کو غیر متوقع جواب یا ردعمل کے لیے تیار رہنا چاہیئے جو بہت بے عزت کرنے والا بھی ہوسکتا ہے۔

کھانے کے آداب
کھانے کے دوران آداب کو ملحوظ خاطر رکھیں۔ بدتہذیبی سے کھانا، کانٹوں کو غلط انداز سے پکڑنا یا ویٹر سے درش رویے میں بات کرنا آپ کو وہاں موجود لوگوں کی نظر میں ناپسندیدہ بنا سکتا ہے۔

سوشل میڈیا کا غلط استعمال
ہماری زندگیوں کو کنٹرول کرنے والا سوشل میڈیا بھی ہماری عادات و اخلاق کی نشاندہی کرتا ہے۔ ناپسندیدہ لوگوں کے بارے میں کھل کر سوشل میڈیا پر اظہار کرنا، کسی کا مذاق اڑنا یا قابل نفرت پوسٹس کرناآپ کی پسماندہ ذہنیت کی نشاندہی کرتا ہے۔

فون میں مصروف رہنا
کسی سے گفتگو کرتے ہوئے اپنے فون پر مصروف رہنا آپ کو بد اخلاق ظاہر کرے گا۔ اگر آپ اپنا بہترین تاثر پیش کرنا چاہتے ہیں تو کسی سے گفتگو کرتے ہوئے اپنے فون کو دور رکھیں۔

لوگوں کا تعارف کروائیں
جب بھی دو اجنبی افراد ایک دوسرے سے اس طرح ملیں کہ آپ ان کے مشترکہ جاننے والے ہوں، تو دونوں کا آپس میں تعارف ضرور کروائیں۔ تعارف نہ کروانا دونوں فریقین کو غیر آرام دہ بنا سکتا ہے۔

مدد کی پیشکش نہ کرنا
اگر آپ کے ارد گرد کوئی شخص مشکل کا شکار ہے تو اسے مدد کی پیشکش ضرور کریں۔ یہ مدد نہایت معمولی بھی ہوسکتی ہے جسے دونوں ہاتھوں میں سامان اٹھائے کسی شخص کے لیے دروازہ کھولنا۔ یہ عمل آپ کی اچھی تربیت کی طرف اشارہ کرے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں